بی ایس پروگرام میں یقینی کوالٹی کے حوالے سے گورنمنٹ کالج چترال میں سیمینار

چترال (نامہ نگار) آج گورنمنٹ کالج چترال میں ایک سیمینار منعقد ہوا جس کا موضوع تھا:Quality Assurance in BS Programme of Government Colleges اس سیمینار کے ریسورس پرسنز شہید بینظیر بھٹو یونیورسٹی شرینگل دیر کے ڈپٹی کنٹرولر امتحانات انتخاب عالم اور ڈپٹی ڈائرکٹر کوالٹی ایشورنس ابرار حسین تھے۔ سیمینار میں گورنمنٹ کالج چترال، گورنمنٹ گرلز چترال، گورنمنٹ کالج بونی اور گورنمنٹ گرلز کالج بونی  کے اساتذہ کے علاوہ گورنمنٹ کالج چترال کے بی ایس پروگرام کے سینئیر طلبہ و طالبات شریک ہوئے۔ کالج کے پرنسپل پروفیسر ممتاز حسین نے ایس بی بی یو کا شکریہ ادا کیا جس کے تعاؤن اور حوصلہ افزائی کی وجہ سے کالج میں بی ایس پروگرام کو کامیاب بنانے میں مدد ملی۔ انہوں نے بتایا کہ 2014 میں جب یہ پروگرام شروع ہوا تو حالات انتہائی ناموافق تھے لیکن یونیورسٹی انتظامیہ خصوصاً  انتخاب عالم صاحب نے ہمارے ساتھ ہر قسم کا تعاون کیا اور ہمیں کسی بھی مرحلے پر شکایت کا موقع نہیں دیا۔  کالج انتظامیہ اور اساتذہ کی محنت کے ساتھ ساتھ  یونیورسٹی کی رہنمائی کا نتیجہ ہے کہ ہمارے طلبہ و طالبات کا پہلا بیچ اس سال بہت اچھے نمبروں کے ساتھ ڈگریاں لے کر کامیاب ہوا۔ انہوں نے اس سیمینار میں شرکت کے لیے چترال آنے پر دونوں حضرات کا شکریہ ادا کیا اور امید ظاہر کی کہ ان کے ساتھ تبادلہ خیالات سے اساتذہ اور طلبہ کو تعلیمی عمل میں کافی مدد حاصل ہوگی۔

سیمینار کے پہلے حصے میں انتخاب عالم صاحب نے بی ایس پروگرام کی چیدہ چیدہ خصوصیات اور اصول و ضوابط پر روشنی ڈالی۔ دوسرے حصے میں جناب ابرار حسین نے کالجوں کے لیے کوالٹی ایشورنس کی اہمیت واضح کی اور اس  کے بارے میں تفصیلی معلومات فراہم کیں۔ سیمینار کے دوراں اساتذہ اور طلبہ نے ماہرین سے سوالات کیے اور تجاویز دیں۔

آخر میں کالج کے بی ایس پروگرام کے کوارڈنیٹر پروفیسر غنی الرحمٰن نے شرکاء کا شکریہ ادا کیا۔

زیل نیوز میں شائع مضامین اور کمنٹس سے ادارے کا متفق ہونا ضروری نہیں
96930cookie-checkبی ایس پروگرام میں یقینی کوالٹی کے حوالے سے گورنمنٹ کالج چترال میں سیمینار
Zeal Mobile Reporter

کالم نگار/رپورٹر : سُپر ایڈمین

http://zealnews.tv/wp-content/uploads/2016/10/favicon-300x300.png
زیل نیٹ ورک چترال کے جانے مانے صحافیوں اور لکھاریوں پر مشتمل ایک ٹیم ہے جو کہ صحافتی میدان میں ایک نمایاں مقام اور نام رکھتے ہیں۔ ان کی ہمیشہ کوشش ہوتی ہے کہ خبر ہمیشہ سچ ہو اور اسلامی نظریہ اور نظریہ پاکستان سے متصادم نہ ہو۔
Share This