الیکشن کمیشن بی بی فوزیہ کے ووٹ کی تصدیق کرکے الزام کو ثبوت کے ساتھ میڈیا کے سامنے لائے، انصاف یوتھ نگ چترال

چترال (ارشاداللہ ) انصاف یوتھ ونگ ضلع چترال کے صدر ضیاءالرحمن نے قائد تحریک انصاف عمران خان سے اپیل کی ہے کہ ورکرز کی تحفظات کو دور کرنے کے لیے الیکشن کمیشن آف پاکستان سے ایم پی اے بی بی فوزیہ کے ووٹ کی تصدیق کی جائے اور ان پر لگائے گئے الزام کو ثبوت کے ساتھ میڈیا کے سامنے لائی جائے ۔ ضلعی کابینہ کے دیگر ارکان مقبول الرحمن، محبوب الرحمن ، رحیم اللہ، رفیق الدین، محمد عادل اور سجاداللہ کی معیت میںچترال پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوںنے کہاکہ ایم پی اے بی بی فوزیہ نے قرآن پاک پر ہاتھ رکھ کر اپنی بے گناہی کی قسم کھائی ہے اور ایک مسلما ن کبھی بھی قرآن عظیم الشان پر جھوٹی قسم نہیں کھاسکتی۔ انہوںنے کہاکہ بحیثیت پارٹی کارکن وہ قائد تحریک عمران خان کی طرف سے اس نازک موقع پر پارٹی کے ساتھ غداری کرنے والے ایم پی ایز کو پارٹی سے الگ کرنے کا دلیرانہ فیصلہ کرکے ایک اہم قدم اٹھایا ہے جس کی پاکستان کی سیاسی تاریخ میںکوئی مثال نہیں ملتی لیکن ہم اپنے محبوب قائد سے یہ مطالبہ بھی کرنے کی جسارت کررہے ہیں کہ وہ بی بی فوزیہ کے خلاف الزام کی ذاتی طور پر تحقیق کرکے انہیں انصاف فراہم کرے کیونکہ انہیں اپنی صفائی کا کوئی موقع دئیے بغیر ہی سزا سنائی گئی ہے ۔ انہوںنے مزید کہاکہ بی بی فوزیہ نے گزشتہ پانچ سالوں کے دوران اپنی کارکردگی سے پی ٹی آئی کو ضلع چترال میں ناقابل تسخیر سیاسی قوت بنادی ہے اوردوسری سیاسی جماعتوں کے کارکنان اور رہنماﺅں کی طرف سے فوزیہ کے بارے میں سوشل میڈیا میں رائے زنی پر تنقید کرتے ہوئے کہاکہ یہ پارٹی کا اندرونی مسئلہ ہے اور پارٹی سے باہر افراد کو کوئی حق نہیں پہنچتا کہ وہ فوزیہ کے حق یا مخالفت میں کوئی رائے دے کر یہاں انتشار پھیلائے۔

زیل نیوز میں شائع مضامین اور کمنٹس سے ادارے کا متفق ہونا ضروری نہیں
64760cookie-checkالیکشن کمیشن بی بی فوزیہ کے ووٹ کی تصدیق کرکے الزام کو ثبوت کے ساتھ میڈیا کے سامنے لائے، انصاف یوتھ نگ چترال

کالم نگار/رپورٹر : زیل نیٹ ورک

http://zealnews.tv/wp-content/uploads/2016/10/favicon-300x300.png
زیل نیوزڈیسک چترال کے جانے مانے صحافیوں اور لکھاریوں پر مشتمل ایک ٹیم ہے جو کہ صحافتی میدان میں ایک نمایاں مقام اور نام رکھتے ہیں۔ ان کی ہمیشہ کوشش ہوتی ہے کہ خبر ہمیشہ سچ ہو اور اسلامی نظریہ اور نظریہ پاکستان سے متصادم نہ ہو۔
Share This