کھوار کو آئندہ مردم شماری فارم میں شامل کرنے کی یقین دہانی

ہائی کورٹ نے محکمۂ شماریات کی یقین دہانی کے بعد رٹ پٹیشن نمٹا دی

پشاور( نامہ نگار) پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس یحییٰ افریدی اور جسٹس محمد اعجاز انور پر مشتمل ڈویژن بینج  نے محکمۂ شماریات کی جانب سے چترال سمیت مختلف علاقوں میں بولی جانے والی زبان کھوار کو آئندہ مردم شماری فارمز میں شامل کرنے کی یقین دہانی پر رٹ  پٹیشن نمٹا دی ۔

فاضل عدالت کو  بیرسٹر وقار علی اور ایڈوکیٹ عامر علی نے درخواست  گزار شاہد علی یفتالی کی جانب سے دائر رٹ میں بتایا کہ چترال ،گلگت بلتستان اور دیگر علاقوں میں بولی جانے والی زبان کھوار والیے افراد کی تعداد کے تعین کے لیے مردم شماری فارم  کے فارم میں خانہ شامل نہیں  کیا حالانکہ اس زبان کے بولنے والوں کی تعداد  لاکھوں  میں   مگر اس کے باوجود مردم شماری کے فارمز میں اس زبان کا خانہ شامل نہ کرنا بد دیانتی کو ظاہر کرتا ہے ۔دوسری جانب ڈپٹی آٹارنی جنرل اصغر کنڈی نے عدالت کو بتایا  کہ محکمہ ٔ شماریات نے اپنے جواب میں موقف اختیار کیا کہ چونکہ اب موجودہ  مردم شماری مکمل ہو چکی ہے اور آئندہ مردم شماری  کے فارمز میں اس کا خانہ شامل کیا جائے ۔جس پر فاضل عدالت نے محکمہ ٔ شماریات کی جانب  سے چترال سمیت مختلف علاقوں میں بولی جانے والی زبان کہوار کو آئندہ مردم شماری  فارمزمیں میں شامل کرنے کی یقین دہانی پر رٹ پٹیشن نمٹا دی۔

زیل نیوز میں شائع مضامین اور کمنٹس سے ادارے کا متفق ہونا ضروری نہیں
30320cookie-checkکھوار کو آئندہ مردم شماری فارم میں شامل کرنے کی یقین دہانی

کالم نگار/رپورٹر : عطا حسین اطہر

http://zealnews.tv/wp-content/uploads/2016/10/favicon-300x300.png
زیل نیوزٹیم چترال کے جانے مانے صحافیوں اور لکھاریوں پر مشتمل ایک ٹیم ہے۔ جو کہ صحافتی میدان میں ایک نمایاں مقام اور نام رکھتے ہیں۔ ان کی ہمیشہ کوشش ہوتی ہے کہ خبر ہمیشہ سچ ہو اور اسلامی نظریہ اور نظریہ پاکستان سے متصادم نہ ہو۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Share This