نکتہ دان

انتہائی سنئیر نثر نگار جس کا تعلق اوی اپر چترال سے ہے نکتہ دان میں ایسے ایسے نکتے اٹھا لیتے ہیں کہ پڑھنے والا خود سے ہی غافل ہو جاتا ہے۔

ذکر چترالی قوم کے محسنوں کا

خدا کی اس بستی میں کچھ خاصال یگانہ ایسے ہیں جنہیں اللہ تعالیٰ دوسرے انسانوں کی خدمت کا جذبہ عطا کرتاہے ان کے اس جذبے کی عکاسی مواقع کی مناسبت پر منحصر ہے۔ کسی  کو اللہ تعالیٰ بہت بڑے رتبے پر مقرر کرکے ان کی شہرت کو دور دور تک چار چرند کرنے کا موقع دیتا ہے لیکن بہت سے ...

مزید پڑھئے

پاکستان کے دو مثالی وزرائے اعظم

چودھری محمد علی گورنر جنرل غلام محمد کی سبکدوشی کے بعد میجر جنرل سکندرمرزا اگست ۱۹۵۵ میں پاکستان کے گورنر جنرل بنے ۔پانچ روز بعد ۱۱-اگست ۱۹۵۵ کو مسلملیگ اور یونائیڈفرنٹ کی کولیشن سے چودھری محمد علی نے وزارت اعظمیٰ کا حلف اٹھایا۔شیر بنگال مولوی اے-کے فضل حق ان کی کابینہ میں وزیر داخلہ تھے ۔وزیر اعظم کے طورپر چودھری ...

مزید پڑھئے

چترالی ثقافت عروج و زوال کے آئینے میں (آخری قسط)

شادی بیاہ کی رسمیں: چترال میں شادی بیاہ کی رسمیں انتہائی سادہ مگر پر لطف تھیں۔ مگر اب مہنگے اور بے رونق ہوگئے ہیں۔ لڑکی کی منگنی کیلئے کسی پر کوئی خاص بوجھ نہیں تھی اس میں پسند ناپسند کی کوئی فکر نہ تھی کیونکہ پسند ناپسند کے معاملے میں اولاد کی رائے کیی زیادہ نہیں تھی والدین جسے چاہتے ...

مزید پڑھئے

چترالی ثقافت عروج و زوال کے آئینے میں

باوثوق تاریخی شواہد کے مطابق چترال کی سرزمین میں دو قومیں آباد تھیں ایک کلاش اور دوسرا کھو ۔کالاش قوم زیریں حصے پر آباد تھی جبکہ کھو قوم بالائی حصے پر آباد تھی۔ دونوں قوموں کا تمدن رسم و رواج ایک دوسرے سے یکسر مختلف تھا۔ بعدازاں چین اور وسطاایشیاء سے مختلف اقوام جیسے رائیس اور مغل آکر چترال میں ...

مزید پڑھئے

چترالی عورت

وجودِ زن سے ہے تصویر کائنات میں رنگ ارشادِ ربانی ہے کہ” میں نے تمہیں ایک مرد اور عورت سے پیدا کیا ہے ،مطلب یہ ہے کہ نسلِ انسانی کا وجود ان دونوں کی اشتراک  پر منتج ہے ۔یہ دونوں ایک دوسرے کے لیے لازم و ملزوم ہیں ۔حیات انسانی میں ایک  کے بے غیر دوسرے کا وجود بے معنی ...

مزید پڑھئے

ہمارا مطالبہ ضلع ثانی کی بحالی

ضلع چترال پاکستان کے انتہائی شمال مشرق میں پہاڑوں کے درمیان گھرا ہوا وسیع رقبے پر پھیلا خطہ ہے ۔جغرافیائی حدود کے لحاظ سے یہ روس چین او ر افغانستان کے سنگم پر واقع ہے ۔اس کی بہت لمبی سرحدیں براہ ِ راست افغانستان سے جا ملتی ہیں جبکہ بالواسطہ اس کی سرحدیں بہت قریب سے روس اور چین سے ...

مزید پڑھئے

ہر گام پر چند آنکھیں نگران!!

شندور کا درہ گلگت بلتستان کے ضلع غذر اور چترال کو ملانے والی مشہور درہ ہے ۔آزمنۂ قدیم میں کشمیر اور وسط ایشیا سے آنے والے کئی حملہ آور یہیں سے ہوکر گزرے۔۱۸۹۵ء میں انگریزی فوج کرنل کیلی کی کمان میں اسی درے سے چترال پر حملہ آور ہوئے ۔انگریزوں کے قبضے سے پہلے چترال بونجی سے لے کر اسمار ...

مزید پڑھئے

ہماری پرائمری تعلیم نقائص،مشکلات اور ان کا ممکنہ حل

ماہرین کا کہنا ہے کہ بچے کی ابتدائی درسگاہ ماں کی گود ہے۔ماں کی گود سے معاشرے میں قدم رکھنے کے بعد بچہ اپنی ابتدائی تعلیم پرائمری اسکول سے حاصل کرتا ہے ۔یہی وجہ ہے کہ بچے کی قابلیت کا تمام تردارومدار پرائمری تعلیم کی بنیادوں پر منحصر ہے  ۔ کسی شاعر نے کیا خوب کہا ہے کہ خشت اوّل ...

مزید پڑھئے

ہمارا ٹھیکہ داری نظام

ہمارے ملک میں تعمیرات عامہ کے تمام منصوبے ٹھیکہ داری نظام کے تحت چل رہے ہیں اگر بنظرِ عائر دیکھا جائے تو ملک کی تعمیر و ترقی کا انحصار اس نظام پر منحصر ہے ۔ بات شروع کرتے ہوئے مجھے ایک لطیفہ یاد آرہا ہے ۔اپنے چترال میں شخصی حکمرانوں کے زمانے میں ان کے مصاحبین اور درباری حضرات قدم ...

مزید پڑھئے

ہمارے پرائیویٹ کالجز اور ان کا کردار

عصر حاضرہ میں سائنس کی ترقی اور مقابلے کی دوڑ سب کے سامنے ہے لیکن چترال کے باہر سائنس کالجز میں داخلہ اور پیسے کا مسئلہ چترالیوں کے لیے خاصا مشکل ہے انہی حالات کے تناظر میں چترال کے اندر جب پرائیویٹ سائنس کالجز کا قیام عمل میں آیا تو غریب چترالیوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی  اور سائنس ...

مزید پڑھئے