• خزاں رسیدہ پتے کی شاگردی

    سرراہ، یونہی چلتے چلتے، ایک اوندھے منہ لیٹے پتے سے ملاقات ہوگئی۔ گٹر کے آہنی، مگر جالی دار، ڈھکن کے اوپر لیٹا یہ زردی مائل  پتااپنا سا لگا۔ میں نے موبائل کا رُخ پتے کی طرف کیا، اور اس کی تصویر اُتاری۔ نہ جانے کیوں گرے ، روندے اور خزان رسیدہ پتے اپنے اور اچھے سے لگتے ہیں۔ کوئی تو فلسفہ یا سانحہ ہوگا، جو نظروں کو گٹر کی جالی ...

    مزید پڑھئے
  • دھواں

  • ہمارے جناب

    وسیع جبے کے اختتام پر ماہین آبرو، دراز پلکوں کے سائے میں بڑی بڑی دلنشین آنکھیں ، پتلی سی ناک، گلابی ہونٹ جو جدا ہو تو سفید موتی نظر آئیں، چاند سا روشن چہرے کے ساتھ زلفوں کا رنگ گہرا ہو، یہ تعارف کسی خوبرو دوشیزہ کا ہوسکتا ہے لیکن ہمارے جناب کا انداز نرالا ہے۔ تعارف ان  کابھی ایسا ہی ہے مگر تھوڑے ردبدل کے ساتھ۔ ماتھا ان کا ...

    مزید پڑھئے
  • چترال میں شادی بیاہ کی رسم

    چترال میں شادی بیاہ کے رسوم بھی قدیم وسطی ایشیا کی تہذیب و تمدن کے منفرد نمونے ہیں۔ شادی بیاہ کے مواقع پر دعوتیں، خوشیاں، ناچ ،گانے اور رقص دسرود تو ہر جگہ ہوتے ہیں۔ مگر چترال میں ان روایتی رسوم کے اپنے الگ الگ طور طریقے ہیں۔ ہر رسم کے ساتھ الگ الگ روایات وابستہ ہیں۔ شادی کے سلسلے میں سب سے پہلی رسم منگنی ہے۔ جسے “ویچھیک” کہتے ...

    مزید پڑھئے
  • کنک کے چند دانے، ہَری کوکھ اور اُمید کی اذان

    اردو ادب میں اگر دس بہترین ناولوں کی فہرست ترتیب دی جائے تو مستنصر حسین تارڑ کا ناول “بہاؤ” کو بلا جھجھک اس میں شامل کیا جاسکتا ہے۔ “بہاؤ” کی عظمت کی دو وجوہات ہیں۔ اول ناول کی کہانی ہے جو ہزاروں سال قبل کی وادیِ سندھ اور اس کی تہذیب کے گرد گھومتی ہے۔ دوسری وجہ اس کا نہایت ہی منفرد لب و لہجہ اور زبان ہے۔ ظاہر سی ...

    مزید پڑھئے

زیل کھوار